Whatsapp status shayari sad status shayari hindi urdu

Spread the love

ہم اپنی ریاست کے بادشاہ لوگ
افسوس تیرے دیدار کے محتاج نکلے،

سنا ہے بہت ‏‎ ‎دور سے آتے ہیں لوگ دیدار کے لیے
سجا ہوتا ہے جب انسان سفید جوڑے میں‎

جو شخص تیرے تصور سے ہی مہک جائے
سوچ تیرے دیدار میں اس کا کیا حال ہوگا

دل نے تیرے فراق میں کر لی ہے خودکشی
اور آنکھیں تیرے دیدار کے فاقوں سے مر گئیں

نہ شوق دیدار کی طلب نہ فکرِ جُدائی
اُف کتنے سکون سے سوتے ہے جو محبت نہیں کرتے

حسرتِ دیدار بھی کیا چیز ہے صاحب!
وُہ سامنے ہوں تو مسلسل دیکھا بھی نہیں جاتا

جو دل کے آئینے میں ہو وہی ہے پیار کے قابل
ورنہ دیدار کے قابل تو ہر تصویر ہوا کرتی ہے

طلب اتنی ہے کے دل و جان میں بسالوں تم کو
نصیب ایسے کے دیدار بھی میسر نہیں ہے تیرا

نطر اداس ہے
نطر ہی آجاو

سنا ہے بہت ‏‎ ‎دور سے آتے ہیں لوگ دیدار کے لیے.
سجا ہوتا ہے جب انسان سفید جوڑے میں‎

سوچ رہا ہوں، کروں بھی تو کیا کروں
آج یہ دل تیرے دیدار کی ضد لے بیٹھا ہے

اب تو ہے مدتوں سے شب و روز روبرو
کتنے ہی دن گزر گۓ دیدار کو تیرے

مجھ سے ملتے ہیں تو ملتے ہیں چورا کر آنکھیں
پھر وہ کس کے لئے رکھتے ہیں سجا کر آنکھیں

سارا دن گزرتا ہے دیدار میں اُن کے
اتوار کی چھٹی کا مزہ ہم سے پوچھیے

ہم کو سمجھنے کے لیے ہم جیسا ہونا ضروری ہے
ہمارا دیدار الگ ہمارا معیار الگ اور ہمارا پیار الگ

جہان شوق میں ہمدم فقط رائج یہی ہے کہ
نگاہ یار ہو جس پر وہی دیدار کو ترسے

تیری ایک جھلک کو ترس جاتا ہے دل میرا
قسمت والے ہیں وہ لوگ جو روز تیرا دیدار کرتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *