Sad ghazals best evers ghazals shayari urdu hindi

حسنِ مہ گرچہ بہ ہنگامِ کمال اچّھا ہے
اس سے میرا مۂ خورشید جمال اچّھا ہے​

ان کے دیکھے سے جو آ جاتی ہے منہ پر رونق
وہ سمجھتے ہیں کہ بیمار کا حال اچّھا ہے​

دیکھیے پاتے ہیں عشّاق بتوں سے کیا فیض
اک برہمن نے کہا ہے کہ یہ سال اچّھا ہے​

ہم سخن تیشے نے فرہاد کو شیریں سے کیا
جس طرح کا کہ کسی میں ہو کمال اچّھا ہے​

قطرہ دریا میں جو مل جائے تو دریا ہو جائے
کام اچّھا ہے وہ جس کا کہ میٰل اچّھا ہے​

خضر سلطاں کو رکھے خالقِ اکبر سر سبز
شاہ کے باغ میں یہ تازہ نہال اچّھا ہے​

ہم کو معلوم ہے جنّت کی حقیقت لیکن
دل کے بہلانے کو غالب یہ خیال اچھا ہے

بہ رنگ نغمہ بکھر جانا چاہتے ہیں ہم
کسی کے دل میں اتر جانا چاہتے ہیں ہم

زمانہ اور ابھی ٹھوکریں لگائے ہمیں
ابھی کچھ اور سنور جانا چاہتے ہیں ہم

اسی طرف ہمیں جانے سے روکتا ہے کوئی
وہ ایک سمت جدھر جانا چاہتے ہیں ہم

وہاں ہمارا کوئی منتظر نہیں پھر بھی
ہمیں نہ روک کہ گھر جانا چاہتے ہیں ہم

ندی کے پار کھڑا ہے کوئی چراغ لیے
ندی کے پار اتر جانا چاہتے ہیں ہم

انہیں بھی جینے کے کچھ تجربے ہوئے ہوں گے
جو کہہ رہے ہیں کہ مر جانا چاہتے ہیں ہم

کچھ اس ادا سے کہ کوئی چراغ بھی نہ بجھے
ہوا کی طرح گزر جانا چاہتے ہیں ہم

زیادہ عمر تو ہوتی نہیں گلوں کی مگر
گلوں کی طرح نکھر جانا چاہتے ہیں ہم

جب ترے نین مسکراتے ہیں
زیست کے رنج بھول جاتے ہیں
کیوں شکن ڈالتے ہو ماتھے پر
بھول کر آ گئے ہیں جاتے ہیں
کشتیاں یوں بھی ڈوب جاتی ہیں
ناخدا کس لیے ڈراتے ہیں
اک حسیں آنکھ کے اشارے پر
قافلے راہ بھول جاتے ہیں

Mirza ghalib hindi ghazals hindi sad ghazals

آ کہ مری جان کو قرار نہیں ہے

Poet: مرزا غالب

آ کہ مری جان کو قرار نہیں ہے
طاقت بیداد انتظار نہیں ہے

دیتے ہیں جنت حیات دہر کے بدلے
نشہ بہ اندازۂ خمار نہیں ہے

گریہ نکالے ہے تیری بزم سے مجھ کو
ہائے کہ رونے پہ اختیار نہیں ہے

ہم سے عبث ہے گمان رنجش خاطر
خاک میں عشاق کی غبار نہیں ہے

دل سے اٹھا لطف جلوہ ہائے معانی
غیر گل آئینۂ بہار نہیں ہے

قتل کا میرے کیا ہے عہد تو بارے
وائے اگر عہد استوار نہیں ہے

تو نے قسم مے کشی کی کھائی ہے غالبؔ
تیری قسم کا کچھ اعتبار نہیں ہےmirza ghalib

ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نکلے

Poet: Mirza Ghalib

ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نکلے
بہت نکلے مرے ارمان لیکن پھر بھی کم نکلے

ڈرے کیوں میرا قاتل کیا رہے گا اس کی گردن پر
وہ خوں جو چشم تر سے عمر بھر یوں دم بدم نکلے

نکلنا خلد سے آدم کا سنتے آئے ہیں لیکن
بہت بے آبرو ہو کر ترے کوچے سے ہم نکلے

بھرم کھل جائے ظالم تیرے قامت کی درازی کا
اگر اس طرۂ پر پیچ و خم کا پیچ و خم نکلے

مگر لکھوائے کوئی اس کو خط تو ہم سے لکھوائے
ہوئی صبح اور گھر سے کان پر رکھ کر قلم نکلے

ہوئی اس دور میں منسوب مجھ سے بادہ آشامی
پھر آیا وہ زمانہ جو جہاں میں جام جم نکلے

ہوئی جن سے توقع خستگی کی داد پانے کی
وہ ہم سے بھی زیادہ خستۂ تیغ ستم نکلے

محبت میں نہیں ہے فرق جینے اور مرنے کا
اسی کو دیکھ کر جیتے ہیں جس کافر پہ دم نکلے

کہاں مے خانہ کا دروازہ غالبؔ اور کہاں واعظ
پر اتنا جانتے ہیں کل وہ جاتا تھا کہ ہم نکلے

دل ناداں تجھے ہوا کیا ہے

Poet: Mirza Ghalib

دل ناداں تجھے ہوا کیا ہے
آخر اس درد کی دوا کیا ہے

ہم ہیں مشتاق اور وہ بیزار
یا الٰہی یہ ماجرا کیا ہے

میں بھی منہ میں زبان رکھتا ہوں
کاش پوچھو کہ مدعا کیا ہے

جب کہ تجھ بن نہیں کوئی موجود
پھر یہ ہنگامہ اے خدا کیا ہے

یہ پری چہرہ لوگ کیسے ہیں
غمزہ و عشوہ و ادا کیا ہے

شکن زلف عنبریں کیوں ہے
نگہ چشم سرمہ سا کیا ہے

سبزہ و گل کہاں سے آئے ہیں
ابر کیا چیز ہے ہوا کیا ہے

ہم کو ان سے وفا کی ہے امید
جو نہیں جانتے وفا کیا ہے

ہاں بھلا کر ترا بھلا ہوگا
اور درویش کی صدا کیا ہے

جان تم پر نثار کرتا ہوں
میں نہیں جانتا دعا کیا ہے

میں نے مانا کہ کچھ نہیں غالبؔ
مفت ہاتھ آئے تو برا کیا ہے

آہ کو چاہیے اک عمر اثر ہوتے تک

Poet: Deewan-e-Ghalib

آہ کو چاہیے اک عمر اثر ہوتے تک
کون جیتا ہے تری زلف کے سر ہوتے تک

دام ہر موج میں ہے حلقۂ صد کام نہنگ
دیکھیں کیا گزرے ہے قطرے پہ گہر ہوتے تک

عاشقی صبر طلب اور تمنا بیتاب
دل کا کیا رنگ کروں خون جگر ہوتے تک

تا قیامت شب فرقت میں گزر جائے گی عمر
سات دن ہم پہ بھی بھاری ہیں سحر ہوتے تک

ہم نے مانا کہ تغافل نہ کرو گے لیکن
خاک ہو جائیں گے ہم تم کو خبر ہوتے تک

پرتو خور سے ہے شبنم کو فنا کی تعلیم
میں بھی ہوں ایک عنایت کی نظر ہوتے تک

یک نظر بیش نہیں فرصت ہستی غافل
گرمیٔ بزم ہے اک رقص شرر ہوتے تک

غم ہستی کا اسدؔ کس سے ہو جز مرگ علاج
شمع ہر رنگ میں جلتی ہے سحر ہوتے تک

آئینہ دیکھ اپنا سا منہ لے کے رہ گئے

Poet: Deewan-e-Ghalib

آئینہ دیکھ اپنا سا منہ لے کے رہ گئے
صاحب کو دل نہ دینے پہ کتنا غرور تھا

قاصد کو اپنے ہاتھ سے گردن نہ ماریے
اس کی خطا نہیں ہے یہ میرا قصور تھا

ضعف جنوں کو وقت تپش در بھی دور تھا
اک گھر میں مختصر بیاباں ضرور تھا

اے وائے غفلت نگۂ شوق ورنہ یاں
ہر پارہ سنگ لخت دل کوہ طور تھا

درس تپش ہے برق کو اب جس کے نام سے
وہ دل ہے یہ کہ جس کا تخلص صبور تھا

ہر رنگ میں جلا اسدؔ فتنہ انتظار
پروانۂ تجلی شمع ظہور تھا

شاید کہ مر گیا ترے رخسار دیکھ کر
پیمانہ رات ماہ کا لبریز نور تھا

جنت ہے تیری تیغ کے کشتوں کی منتظر
جوہر سواد جلوۂ مژگان حور تھا

. हर एक बात पे कहते हो तुम कि ‘तू क्या है’
हर एक बात पे कहते हो तुम कि ‘तू क्या है’
तुम्हीं कहो कि ये अंदाज़-ए-गुफ़्तगू क्या है

न शो’ले में ये करिश्मा न बर्क़ में ये अदा
कोई बताओ कि वो शोखे-तुंद-ख़ू क्या है

ये रश्क है कि वो होता है हमसुख़न तुमसे
वर्ना ख़ौफ़-ए-बद-आमोज़िए-अ़दू क्या है

चिपक रहा है बदन पर लहू से पैराहन
हमारी जैब को अब हाजत-ए-रफ़ू क्या है

जला है जिस्म जहाँ, दिल भी जल गया होगा
कुरेदते हो जो अब राख, जुस्तजू क्या है

रगों में दौड़ने-फिरने के हम नहीं क़ायल
जब आँख ही से न टपका, तो फिर लहू क्या है

वो चीज़ जिसके लिये हमको हो बहिश्त अज़ीज़
सिवाए वादा-ए-गुल्फ़ाम-ए-मुश्कबू क्या है

पियूँ शराब अगर ख़ुम भी देख लूँ दो-चार
ये शीशा-ओ-क़दह-ओ-कूज़ा-ओ-सुबू क्या है

रही न ताक़त-ए-गुफ़्तार और अगर हो भी
तो किस उमीद पे कहिए कि आरज़ू क्या है

हुआ है शाह का मुसाहिब, फिरे है इतराता
वगर्ना शहर में ‘ग़ालिब; की आबरू क्या है

शब्दार्थ:

शोखे-तुंद-ख़ू – बिज़ली
शोखे-तुंद-ख़ू – शरारती-अकड़ वाला
हमसुख़न – अकसर बातें करना
ख़ौफ़-ए-बद-आमोज़िए-अ़दू – दुश्मन के सिखाने-पढ़ाने का डर
पैराहन – चोला
हाजत-ए-रफ़ू – रफ़ू करने की जरूरत
जुस्तजू – तलाश
क़ायल – प्रभावित होना
बहिश्त – स्वर्ग
ऊपर अज़ीज़ – प्रिय
ऊपर वादा-ए-गुल्फ़ाम-ए-मुश्कबू – गुलाबी कस्तूरी-सुगंधित शराब
ख़ुम – शराब के ढ़ोल
शीशा-ओ-क़दह-ओ-कूज़ा-ओ-सुबू – बोतल, प्याला, मधु-पात्र और मधु-कलश
ताक़त-ए-गुफ़्तार – बोलने की ताकत
मुसाहिब – ऱाजा का दरबारी
आबरू – प्रतिष्ठा


aah ko chaahiye ik umr asar hone tak

aah ko chaahiye ik umr asar hone tak
kaun jeeta hai teri zulf ke sar hone tak ?

aashiqee sabr talab aur tamanna betaab
dil ka kya rang karooN KHoon-e-jigar hone tak ?

humne maana ke taGHaful na karoge lekin,
KHaak ho jaayeNge ham tumko KHabar hone tak

GHam-e-hastee ka ‘Asad’ kis se ho juz marg ilaaz
shamma har rang meiN jaltee hai sahar hone tak


har ek baat pe kehte ho tum

har ek baat pe kehte ho tum ke ‘too kya hai’ ?
tumheeN kaho ke yeh andaaz-e-guftgoo kya hai?

ragoN meiN dauDte firneke hum naheeN qaayal
jab aaNkh hee se na Tapka to fir lahoo kya hai ?

chipak raha hai badan par lahoo se pairaahan
hamaaree jeb ko ab haajat-e-rafoo kya hai ?

jalaa hai jism jahaaN dil bhee jal gaya hoga
kuredateho jo ab raakh, justjoo kya hai ?

rahee na taaqat-e-guftaar, aur agar ho bhee
to kis ummeed pe kahiye ke aarzoo kya hai ?

https://cacke-recipe.com/best-vanilla-cake-recipe-the-best-vanilla-cake

मिर्ज़ा ग़ालिब के ग़ज़लhttps://shayari-urdu-hindi.com/shayari-urdu-hindi-barish-sad-shayari-urdu-hindi-shayari-ghazals-shayari
Mirza ghalib hindi ghazals sad

2. ग़ैर लें महफ़िल में बोसे जाम के
ग़ैर लें महफ़िल में बोसे जाम के

ग़ैर लें महफ़िल में बोसे जाम के
हम रहें यूँ तिश्ना-लब पैग़ाम के

ख़स्तगी का तुम से क्या शिकवा कि ये
हथकण्डे हैं चर्ख़-ए-नीली-फ़ाम के

ख़त लिखेंगे गरचे मतलब कुछ न हो
हम तो आशिक़ हैं तुम्हारे नाम के

रात पी ज़मज़म पे मय और सुब्ह-दम
धोए धब्बे जामा-ए-एहराम के

दिल को आँखों ने फँसाया क्या मगर
ये भी हल्क़े हैं तुम्हारे दाम के

शाह के है ग़ुस्ल-ए-सेह्हत की ख़बर
देखिए कब दिन फिरें हम्माम के

इश्क़ ने ग़ालिब निकम्मा कर दिया
वर्ना हम भी आदमी थे काम के

शब्दार्थ :

बोसे – चुम्मन
तिश्ना-लब – प्यासे होंठ
ख़स्तगी – कमजोरी
चर्ख़-ए-नीली-फ़ाम – नीला आकाश
जामा-ए-एहराम – एक ख़ास कपड़ा जो हज में पहनते हैं
हल्क़े – जंजीर
दाम – फासने के
ग़ुस्ल-ए-सेह्हत – तबियत ठीक होने के बाद का स्नान

whatsapp status shayari love status shayari in urdu

بہت تڑپاۓ گی درد جدائی تم کو
ہمارا کیا! ہم تو مر جائیں گے

ایک تم ہی نہ مل سکے ورنہ
ملنے والے بچھڑ بچھڑ کے ملے

‏کیا میں تیرے بغیر جی لُوں گا ؟
غور سے دیکھ ۔۔۔۔ایک بار مُجھے

سنا ہے آئی ہے اسے میری یاد
ضرور کسی نے ٹھکرایا ہوگا

اس سے پوچھو عذاب رستوں کا
جس کا ساتھی سفر میں بچھڑا ہے

‏اک درد ہے جو ‎چائے میں ملا کر
ہم چپ چاپ پیئے جاتے ہیں__!

اپنی آواز سنا دو جاناں۔۔۔
صبر پھر کبھی آزما لینا۔۔

عشق کو دیجیے، جنُوں میں فروغ
درد سے درد کی دوا کیجیے

‏جدائی سے زیادہ جان لیوا
محبت میں محبت کی کمی ہے

مت پوچھ جدائی کا سبب مجھ سے
ہر بات میرے یار بتائی نہیں جاتی

مت پوچھ جدائی کا سبب مجھ سے
ہر بات میرے یار بتائی نہیں جاتی

تنگ نہیں کرتے ہم انہیں آج کل
یہ بات بھی انہیں تنگ کرتی ہے

https://shayari-urdu-hindi.com/seo-title-preview-2-line-sad-poetry-in-hindi-urdu-sad-whatsapp-status

پھر جدائی قبول کی میں نے
اُس نے جب حوصلہ دیا مجھ کو

ہم مر بھی گئے تو کیا
سوگ ہوگا فقط تین دن کا

ترے بغیر گذارہ نہیں کسی صورت
اسےیہ بات بتانے سے بات بگڑی ہے

کیا کہا یاد کر رہے تھے تُم
ہائے بھول گئے تھے کیا؟؟؟

ہم تمہارے بغیر جینے کی
پہلی کوشش میں مارے جائیں گے

بیتاب ہم بھی ہیں درد جدائی کی قسم
روتا وہ بھی ہو گا نظریں چرا چرا کے

تیرے بنا جینا مشکل ہے
یہ تجھے بتانا اور بھی مشکل ہے

کتنے برسوں کا سفر خاک ہو گیا
اس نے جب پوچھا ۔۔۔ کیسے آنا ہوا

یہ خوف تھا کہ کوئی سانحہ گزرنا ہے!!
گمان نہ تھا کہ تیرا ساتھ چھوٹ جائے گا

تعزیت کے لئیے آئیں نا
میری خواہشیں مر گئیں ہیں

تیری تصویر کھو گئ مجھ سے
ہائے! وہ گیلری کی رونق تھی

جسے دیکھا اسے مخلص جانا
نگاہوں نے بڑے دھوکے دیئے

خبر کر دے کوئی اس بےخبر کو
میری حالت بگڑتی جا رہی ہے

کاش کوئی ہوتا جو ہمارے آنسوؤں کا بھرم رکھتا
یہاں تو ہر شخص نے رولانے کی قسم کھا رکھی ہے

عشق کرنا ہے پھر درد بھی سہنا سیکھو
ورنہ ایسا کرو، اوقات میں رہنا سیکھو

‏اتنا درد تو مرنے سے بھی نہ ہوگا
‏جتنا درد تیری خاموشی نے دیا ہے۔۔

مجھے اس لیے بھی پسند ہیں درد مند لوگ
خود ٹوٹ جاتےہیں کسی کا دل نہیں توڑتے

جب درد عروج_ پہ ہو
تب میں زخموں سے کھیلتا ہوں..!

Shayari urdu sad poetry zindagi shayari sher o shayari zindgi urdu poetry

Shayari sad zindagi Sher

بدل دینگے اپنی زندگی اس طرح
دیدار تو دور لوگ بات کرنے کو بھی ترسیں گے

زندگی میں ایسے بھی مقام ائے
نا دیا ساتھ اپنوں نے نا غیر کام آئے

زندگی بے سبب اداس نہیں
روخ میں شاید کوی غم ھے پوشیدہ

ایک ایسا بھی سفر کروایا زندگی نے
جس میں پاوں نہیں دل تھک گیا میرا

چھوٹی سی زندگی نے بڑا سبق دیا
رشتے سب سے رکھو امید کسی سے نہیں

آو ملتے ہیں اب تسلی سے
زندگی درمیاں تھی پہلے

https://shayari-urdu-hindi.com/whatsapp-status-shayari-love-status-shayari-in-urdu

زندگی تیرے تسلسل میں ہم نے
وہ لوگ بھی کھوئے جو سانس کی مانند تھے

ﻣﯿﺮﯼ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺑﮭﯽ ﺍﺱ ﻗﺒﺮﺳﺘﺎﻥ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﮨﮯ
ﺟﮩﺎﮞ ﻟﻮﮒ ﺗﻮ ﺑﮩﺖ ﮨﯿﮟ ﻣﮕﺮ ﺍﭘﻨﺎ ﮐﻮﺋﯽ ﻧﮩﯿﮟ

زندگی بہت خو بصورت ہے اگر
ساتھ چلنے والے منافق نہ ہوں

زندگی تیرے بھی شکوے تو بجا ہیں لیکن
کیسے جھک جائیں کہ ہم لوگ انا والے ہیں

اے زندگی رُک مجھے سانس تو لینے دے
میں بتا تا ہوں تجھے کہ ماجرہ کیا تھا

بہت تنگ ہو تیری نوکری سے
اے زندگی میرا حساب کر دے

shayari urdupoetry zindgai

زندگی ہوتی تو گزاری ہوتی
ہم نے ہر لمحہ موت بسر کی ہے

یہ دنیا ہے صاحب یہاں سچ کو دیکھا
اور جھوٹوں کو موقع ضرور ملتا ہے

زندگی بہت تکلیف دیتی ہے
دعا کرو کہ گزر جائے

تم زندگی کی وہ کمی ہو
جو زندگی بھر رہے گی

تھوڑا سا سفر بس اور تھوڑا سا
اسی آس پہ بہت، تھکا دیا زندگی تُو نے

اب موت کیا مارے گی
ہمیں تو زندگی نے فنا کیا ہے

کھیلتی ہے دکھوں کے ساتھ
زندگی بڑی شرارتی ہے صاحب

زندگی کٹھن ہی سہی
گزارا کیجیے، گزار دیجیے

مسکراہٹ کی بات کرتے ہو
جی رہا ہوں یہی غنیمت ہے

2 line sad poetry in hindi urdu sad best 2 line poetry

تجھ سے نہیں تیرے وقت سے ناراض ہوں
جو کبھی بھی تجھے میرے لیے نہیں ملتا

تیرا روٹھنا بجا ہے لیکن
میری ہچکیوں پہ غور کر

خاموشیاں ہی بہتر ہیں
لفظون سے لوگ اکثر روٹھ جاتے ہیں

مشہور بہت ہے میرے الفاظ کی تاثیر
مگر اک شخص مجھ سے منایا نہیں جاتا

روٹھنے سے کیا ہو گا
آؤ مل کر معذرت کر لیں

چاہو لیکن چاہنے کا یہ تقاضا رکھو کے
چاہت ٹوٹ بھی جائے مگر دل زخمی نا ہو

پھر کسی بات پہ ناراض نہ ہو جاؤ کہیں
تم سے تو بات بڑھاتے ہوئے ڈر لگتا ہے

وہ روٹھا رہے مجھے سے یہ منظور ہے لیکن
یاروں اسے سمجھو وہ میرا شہر نہ چھوڑے

میں اس شخص کو کیسے مناؤں گا محسن
جو مجھ سے روٹھا ہے میری محبت کے سبب

تیرے لہجے سے کیوں لگا مجھ کو
تو میرے روٹھنے پہ راضی ہے

زندگی کٹ گئی مناتے ہوئے
اب ارادہ ہے روٹھ جانے کا

تم جو بچھڑے ہو جلد بازی میں
تم تو اپنے تھے روٹھ بھی سکتے تھے

New sad 2 line shayari urdu hindi

https://shayari-urdu-hindi.com/new-sad-2-line-shayari-urdu-hindi-sad-shayari-love

کیا ضروری تھا یوں خفا ہونا
مجھ کو ویسے بھی چھوڑ سکتے تھے.

تم نے روٹھنے میں جلدی کی
بچھڑ تو ویسے بھی جانا تھا

خاموشی بہتر ہے صاحب
لفظوں سے لوگ روٹھ جاتے ہیں

تُو جو روٹھے تو رب روٹھے
رب روٹھےجو تُو روٹھے

بہت رویا وہ تیرے روٹھ جانے سے
تو بات تو کر کسی بہانے سے

‏میں چاہتا تو کب کا , اُسے منا لیتا
مگر وہ روٹھا نہیں تھا بدل گیا تھا

کیا کہوں زندگی کے بارے میں
ایک تماشہ تھا عمر بھر دیکھا

زرا جو سمجھ آنے لگتی ہے کتاب حیات
زندگی اکثر نیا ورق پلٹ دیتی ہے

زندگی تو سستی ہے ،،صاحب
گزارنے کے طریقے مہنگے ہیں

مصروف زندگی میں تیری یاد کے سوا
آتا نہیں ہے کوئی میرا حال پوچھنے

میں تو اس زندگی سے روٹھا ہوں
آپ کیوں آ رہے ہیں سمجھانے

نہ جانے حشر میں کیا حشر ہو گا۔
چلے ہیں زندگی برباد کر کے۔

New sad 2 line shayari urdu hindi sad shayari love

ہمیں آتی نہیں یہ پیار بھری شاعری
جس نے درد سننا ہو آ جائے محفل میں

بہُت ہی زیادہ شوق تھا انہیں میرا آشیانہ دیکھنے کا
دیکھی جب غریبی میری تو اپنا راستہ بدل لیا

ہم نے سمیٹے ہیں درد دنیا کے
تم سے ایک ہم نہ سمبھالے گئے

درد میں بھی آواز ہوتی ہے
کبھی غور کرنا میرے لفظوں پر

سنا ہے درد کا احساس اپنوں کو ہوتا هے
جب درد اپنے دیں، تو احساس کون کرے گا

بہت سخی ہے یہ بازار محبت
یہاں قدم قدم پر درد ہی درد ملتا

https://shayari-urdu-hindi.com/whatsapp-status-shayari-sad-status-shayari-hindi-urdu/

میں نے کہا اک پل میں کیسے نکلتی ہے جان
اس نے چلتے چلتے میرا ہاتھ چھوڑ دیا

تم محبت کر کے درد دیتے ہوں
ہم محبت کر کہ درد لیتے ہے

وہ روز ڈھونڈتا ہے نیا بہانا مجھے درد دینے کا
اسے کہو کبھی مرہم لگانے کا بہانا بھی ڈھونڈے

مختصراتناکہ دوحرفوں سے بن جاتاھے دل
اورطویل اتناکہ اس میں دوجہاں کادردھے

درد اتنا کے ہر رگ میں ہے مہشر برپا
اور سکوں ایسا کے مر جانے کو جی چاہتا ہے

ﭘﮩﻠﮯ ﺗﻮ ﺍُﺱ ﻧﮯ ﻏﻢ ﮐﮯ ﻓﻮﺍﺋﺪ ﺑﯿﺎﮞ ﮐﺌﮯ
ﭘﮭﺮ ﻭﻗﻔﮧ ﻟﮯ ﮐﮯ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﺎ، ‘ ﺧﻮﺵ ﺭﮨﺎ ﮐﺮﻭ

‏کر ان کا ادب، رکھ انہیں سینے سے لگا کر
یہ درد ، یہ تنہائیاں ، مہمان ہیں محسن

یہ مت سوچنا کہ ہم غافل ہو گئے ہیں تیری یاد سے
بس تمہیں مصروف سمجھ کر زیادہ تنگ نہیں کرتے

درد میں کر دیتا ہے اور بھی اضافہ
تیرے ہوتے ہوے کسی اور کا دلاسہ دینا

کاش کوی ایسا ھو جو گلے لگاکر کہے.
رویا نا کر ترے درد سے مجھے بھی درد ھوتا ھے

میرے درد سے آخر تیرا رشتہ کیا ہے
دل جب بھی روتا ہے تم یاد آتے ہو

کیا پوچھتے ہو مجھ سے درد کہاں ہوتا ہے
ایک جگہ ہو تو بتاؤں کے یہاں ہوتا ہے

Whatsapp status shayari sad status shayari hindi urdu

ہم اپنی ریاست کے بادشاہ لوگ
افسوس تیرے دیدار کے محتاج نکلے،

سنا ہے بہت ‏‎ ‎دور سے آتے ہیں لوگ دیدار کے لیے
سجا ہوتا ہے جب انسان سفید جوڑے میں‎

جو شخص تیرے تصور سے ہی مہک جائے
سوچ تیرے دیدار میں اس کا کیا حال ہوگا

دل نے تیرے فراق میں کر لی ہے خودکشی
اور آنکھیں تیرے دیدار کے فاقوں سے مر گئیں

نہ شوق دیدار کی طلب نہ فکرِ جُدائی
اُف کتنے سکون سے سوتے ہے جو محبت نہیں کرتے

حسرتِ دیدار بھی کیا چیز ہے صاحب!
وُہ سامنے ہوں تو مسلسل دیکھا بھی نہیں جاتا

جو دل کے آئینے میں ہو وہی ہے پیار کے قابل
ورنہ دیدار کے قابل تو ہر تصویر ہوا کرتی ہے

طلب اتنی ہے کے دل و جان میں بسالوں تم کو
نصیب ایسے کے دیدار بھی میسر نہیں ہے تیرا

نطر اداس ہے
نطر ہی آجاو

سنا ہے بہت ‏‎ ‎دور سے آتے ہیں لوگ دیدار کے لیے.
سجا ہوتا ہے جب انسان سفید جوڑے میں‎

سوچ رہا ہوں، کروں بھی تو کیا کروں
آج یہ دل تیرے دیدار کی ضد لے بیٹھا ہے

اب تو ہے مدتوں سے شب و روز روبرو
کتنے ہی دن گزر گۓ دیدار کو تیرے

مجھ سے ملتے ہیں تو ملتے ہیں چورا کر آنکھیں
پھر وہ کس کے لئے رکھتے ہیں سجا کر آنکھیں

سارا دن گزرتا ہے دیدار میں اُن کے
اتوار کی چھٹی کا مزہ ہم سے پوچھیے

ہم کو سمجھنے کے لیے ہم جیسا ہونا ضروری ہے
ہمارا دیدار الگ ہمارا معیار الگ اور ہمارا پیار الگ

جہان شوق میں ہمدم فقط رائج یہی ہے کہ
نگاہ یار ہو جس پر وہی دیدار کو ترسے

تیری ایک جھلک کو ترس جاتا ہے دل میرا
قسمت والے ہیں وہ لوگ جو روز تیرا دیدار کرتے ہیں

Shayari urdu 2 line shayari urdu hindi love shayari

shayari 2 line https://shayari-urdu-hindi.com/2line-shayari-urdu-hindi-sad-lovلائن 2اردو شاعر

اس قدر کشش ہے تُمہَاری اداؤں میں
ہم اگر تُم ہوتے تو خود سے عشق کر لیتے

2 لائن اردو شاعری

یہ عشق محبت کچھ بھی نہیں ہوتا صاحب
جو شخص آج تیرا ہے کل کسی اور کا ہوگا

لائن اردو شاعری

تجھ کو دعوٰی ہے محبت میں گرفتاری کا
لا دِکھا پاؤں میں “زنجیر” ہمارے جیسی اردو شاعری2

محبت کو عقیدہ عاشقی کو دین کہتا تھا
کوئی تھا جو میری ہر بات پہ آمین کہتا تھا

لائن 2 شاعری

کتنے جھوٹے تھے ہم محبت میں..
تم بھی زندہ ہو میں بھی زندہ ہوں اردو2 شاعری

ایک تیری خواہش ہے بس
کائنات کس نے مانگی ہے

اردو شاعری

اداس راتوں کو دیکھ کر…
مجھے محبت پہ ترس آتا ہے.

اردو 2شاعری

‏مجھے وہ زخم مت دینا
دوا جس کی محبت ہو

اردو شاعریlove sad

خواب آنکھوں میں اب نہیں آتے
اب تو پلکوں میں تم سمائے ہو

اردو شاعری2line

تو میسر ہے، تو ہر شے میسر ہے مجھ کو
بِن تیرے اس دنیا کی اوقات کیا ہے

Line 2اردو شاعری

جدائی تو محبت کی پہچان ہوا کرتی ہے
تم صرف میرے ہو اس بات کا خیال رکھنا

Sad lineاردو شاعری2

عجیب خبر ہے صاحب سنو گے
طبیب عشق عشق سے مر گیا

اردو شاعریlove

ﺗﮑﻠﻒ ﺑﺮﻃﺮﻑ ﺗﻢ ﮐﯿﺴﮯ ﻣﻌﺒﻮﺩِ ﻣﺤﺒﺖ ﮨﻮ
ﮐﮧ ﺍﮎ ﺩﯾﻮﺍﻧﮧ ﺗﻢ ﺳﮯ ﮨﻮﺵ ﻣﯿﮟ ﻻﯾﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﺗﺎ

اردو شاعریsadlove

کیا کہوں اب عشق کے درد چھُپانے کو
تم جانتے ہو نا مجھے کوئی بہانہ نہیں آتا

اردو شاعریheart love

کیا کہوں اب عشق کے درد چھُپانے کو
تم جانتے ہو نا مجھے کوئی بہانہ نہیں آتا

اردو شاعری2love

‏قبول جرم کرتے ھیں سجدے میں گر کر اے خدا
سزائے موت منظور ھے پر محبت اب نہیں کرنی

Shayari urdu hindi barish sad ghazals image sad shayari

Shayari urdu hindi Barish

https://shayari-urdu-hindi.com/wp-admin/post.php?post=90&action=edit

Shayari urdu hindi barish

यह बारिश खूबसूरत है एक अरसे बाद मेरी रूह में शराब होने की तमन्ना जाग उठी है। मगर बादल के रास्ते में बहुत से पेड़ आते हैं। मैं पल भर के लिए शादाब हूं और अपनी बाकी उमर फिर से हरा में कार्टून मैं अपने प्यार पर राज़ी रहूंगी मेरे आंसू मेरे दिल की का पालन के लिए काफी रहेंगे।

لوٹ آئی ہیں دیکھو بارشیں پھر سے یہاں وہاں اک تمہی کو لوٹ کے آنے کی فرصت نہیں

The rains have returned. Look, there is no time for you to come back here and there

بارش کے بعد ہوگی رخصت گھٹا بارش کے بعد اک دیا جلتا رہا بارش کے بعد میرے بہتے ہوئے آنسو کو دیکھ کر رو پڑی ٹھنڈی ہوا بارش کے بعد میری تنہائی کا دامن تھام کر کچھ اداسی نے کہا بارش کے بعد یاد تیری اوڑھ کر میں سو گیاخواب کا در کھل گیا بارش کے بعد چاند دیکھ کر بادلوں کی قید میں اک ستارہ رودیا بارش کے بعد اپنے گھر کی ہر کچی دیوار پر نام تیرا لکھ دیا بارش کے بعد

بارش کی برستی بوندیں بارش کی برستی بوندوں نے جب دستک دی دروازے پر محسوس ہوا تم آئے ہو انداز تمہارے جیسا تھا ہوا کی ہلکے جھونکے کی جب آہٹ پائی کھڑکی پر محسوس ہوا تم گزرے ہو احساس تمہارے جیسا تھا میں نے گرتی بوندوں کو روکنا چاہا ہاتھوں پر اک سرد سا پھر احساس ہوا وہ لمس تمھارے جیسا تھا تنہا میں چلا پھر بارش میں تب ایک جھونکے نے ساتھ دیا میں سمجھا تم ہو ساتھ میرے وہ ساتھ تمھارے جیسا تھا پھر رک گئی وہ بارش بھی رہی نہ باقی آہٹ بھی میں سمجھا مجھے تم چھوڑ گئے انداز تمہارے جیسا تھ

Shayari sad barish

Shayari urdu hindi yaad shayari urdu 2line shayari

بھولنا چاہا تھا اُن کو اے عدم
پھر وہ صبح و شام یاد آنے لگے

sad shayari

ایک مدت سے تیری یاد بھی آئی نہ ہمیں اور ہم بھول گئے ہوں تجھے ایسا بھی نہیں

https://shayari-urdu-hindi.com/ahmad-faraz-poetry-in-urdu-hindi-english-poetry-ahmad-faraz/

I haven’t remembered you for a while and we haven’t forgotten you either

hindi urdu shayari

غرض کے کاٹ دیے زندگی کے دن اے دوست وہ تیری یاد میں ہو یا تجھے بھلانے میں

The days of life cut short by purpose, O friend, may it be in your memory or in your forgetfulness

याद है अब तक तुझसे बिछड़ने की वह अंधेरी शाम मुझे तो खामोश खड़ा था लेकिन बातें करता था काजल।

I remember that dark evening of leaving you till now I was standing silently but Kajal was talking

We will remember a lot where we will go from the heart, even if it is far from the eye

आंख से दूर सही दिल से कहां जाएगा जाने वाले तू हमें याद बहुत आएगा।

Not being so sad in someone’s memory, people meet with luck and not with sadness

http://किसी की याद में इतना दुखीकिसी की याद में इतना दुखी न होना, लोग किस्मत से मिलते हैं न कि दुख से